تاجر سیٹھ عابد قلیل علالت کے بعد انتقال کرگئے

لاہور: متنازع تاجر سیٹھ عابد قلیل علالت کے بعد 85 برس کی عمر میں کراچی کے ایک ہسپتال میں انتقال کرگئے۔ ان کے بتھیجے یاسر محمود نے ان کے انتقال کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ’سیٹھ عابد نہیں رہے، انہیں علاج کے لیے اہل خانہ کی جانب سے کراچی میں ایک ہسپتال میں منتقل کیا گیا تھا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکے‘۔انہوں نے کہا کہ ’ان کی نماز جنازہ کراچی میں ہوگی جبکہ قوی امکان ہے کہ آج (ہفتہ) کو بعد نماز عصر ان کی تدفین کردی جائے گی‘۔لاہور اور کراچی میں مقیم سیٹھ عابد سے متعلق کہا جاتا ہے کہ وہ ملک کی 30 امیر ترین شخصیات میں شامل تھے، اس کے علاوہ وہ متعدد کاروبار کامیابی سے چلا رہے تھے جبکہ انہیں نے کئی فلاحی منصوبے بھی شروع کیے تھے۔تاہم یہ اطلاعات تھیں کہ وہ اپنے بیٹے حافظ ایاز احمد کی موت کے بعد سے حالت غم میں تھے۔واضح رہے کہ ان کے بیٹے کو سال 2006 میں لاہور میں شوکت خانم ہسپتال کے قریب ایک ہاؤسنگ اسکیم میں سیکیورٹی گارڈ کی جانب سے فائرنگ کرکے ہلاک کردیا گیا تھا۔قصور سے تعلق رکھنے والے سیٹھ عابد نے سوگواران میں 3 بیٹے اور 3 بیٹیاں چھوڑی ہیں۔یاسر محمود کا کہنا تھا کہ ’میری آنٹی (سیٹھ عابد کی اہلیہ) کا کچھ سال قبل انتقال ہوگیا تھا‘۔

اپنا تبصرہ بھیجیں