سعودی ولی عہد کو کورونا ویکسین لگادی گئی

سعودی عرب کے ولی عہد و نائب وزیر اعظم شہزادہ محمد بن سلمان نے کورونا ویکسین کے قومی منصوبے کے تحت پہلی ڈوز لگوالی۔سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کی رپورٹ کے مطابق وزیر صحت ڈاکٹر توفیق بن فوزان الربیہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ‘میں شہریوں اور رہائشیوں کو ویکسین فراہم کرنے کے لیے ان کی خواہش اور مستقل پیروی کرنے پر سعودی ولی عہد کا شکریہ ادا کرتا ہوں’۔انہوں نے کہا کہ شہزادہ محمد بن سلمان کی طرف سے شہریوں کو بہترین سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ‘بین الاقوامی سطح پر کورونا کی منظور کردہ ویکسین کا ریکارڈ وقت میں حصول اور عوام کو اس کی فراہمی سعودی عرب کو کورونا کی وبا کا بہترین طریقے سے مقابلہ کرنے والے ممالک میں شامل کرتی ہے’۔واضح رہے کہ مشرق وسطی کے ممالک سعودی عرب اور بحرین نے 18 دسمبر سے کورونا ویکسین عام افراد کو لگانا شروع کردی تھی، اس طرح دونوں ممالک اسلامی دنیا کے پہلے ممالک بن گئے تھے جہاں ویکسینیشن کا آغاز ہوا۔سعودی عرب رواں ماہ 10 دسمبر کو پہلا اسلامی ملک بنا تھا، جس نے امریکی کمپنی فائزر و جرمن کمپنی بائیو این ٹیک کی ویکسین کے استعمال کی اجازت دی تھی۔سعودی عرب میں کورونا کی پہلی ویکسین 17 دسمبر کو جن چند افراد کو لگائی گئی، ان میں مملکت کے وزیر صحت بھی شامل تھے۔سعودی عرب کو 16 دسمبر کو جرمن و امریکی کمپنی کی جانب سے ویکسین کی پہلی کھیپ ملی تھی، جس کے بعد 17 دسمبر کو ویکسینیشن کا آغاز کیا گیا۔ویکسین کے لیے حکومت نے سعودی عرب بھر میں خصوصی سینٹرز بنائے ہیں اور صرف ریاض کی ریاست میں ہی 550 سینٹرز بنائے گئے ہیں۔سعودی عرب میں تمام افراد کو مفت کورونا ویکسین فراہم کی جائے گی اور ابتدائی طور پر کورونا سے تحفظ کے لیے کام کرنے والے فرنٹ لائن ورکرز کو ویکسین فراہم کی جائے گی۔تاہم ساتھ ہی عمر رسیدہ افراد سمیت دیگر افراد کو بھی ویکسین لگائی جائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں